رسائی کے لنکس

logo-print

کراچی ٹیسٹ: پاکستان کے بعد سری لنکن بیٹنگ لائن بھی مشکلات کا شکار


پاکستان اور سری لنکا کے درمیان دوسرا اور آخری ٹیسٹ میچ کراچی کے نیشنل کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلا جارہا ہے۔ پاکستان کی پہلی اننگز کے 191 رنز کے جواب میں سری لنکن ٹیم کی بیٹنگ لائن بھی مشکلات کا شکار دکھائی دے رہی ہے۔

کراچی ٹیسٹ کے پہلے دن کے اختتام پر سری لنکا نے 19 اوورز میں 64 رنز اسکور کر لیے ہیں جب کہ اس کے تین کھلاڑی پویلین لوٹ چکے ہیں۔

آؤٹ ہونے والے کھلاڑیوں میں کپتان ڈیمو کرونا رتنے 25، اوشادا فرنینڈو 4 اور کشال مینڈیس 13 رنز بنا سکے۔ اینجلو میتھیوز اور لستھ ایمبولدینیا کریز پر موجود ہیں جنہوں نے بالترتیب آٹھ اور تین رنز بنائے ہیں۔

اس سے قبل پاکستان کے کپتان اظہر علی نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا۔ پاکستان نے اپنی پہلی اننگز میں 63 اعشاریہ 3 بالر پر 191 رنز بنائے۔ اسد شفیق سب سے زیادہ 63 رنز بنانے میں کامیاب رہے جب کہ دوسرا بڑا اسکور کرنے والے بابر اعظم تھے جنہوں نے 60 رنز بنائے۔

پاکستان کی جانب سے اننگز کا آغاز شان مسعود اور عابد علی نے کیا لیکن پاکستان کا اسکور 5 اوورز میں 10 رنز ہی ہوا تھا کہ شان مسعود کو فرنینڈو نے بولڈ کردیا۔ شان صرف 5 رنز ہی بنا سکے۔

ان کی جگہ کپتان اظہر علی کھیلنے آئے لیکن بغیر کوئی رن بنائے وہ بھی فرنیڈو کی بال پر بولڈ ہو گئے۔ یوں پاکستان کی صرف 10 رنز پر دو وکٹیں گر گئیں۔

عابد علی تیسری وکٹ کے طور پر آؤٹ ہوئے۔ انہوں نے 38 رنز بنائے تھے کہ لہیرو کمارا نے انہیں ایل بی ڈبلیو کردیا۔

بابر اعظم اس بار بھی پاکستان کی جانب سے نسبتاً بڑا اسکور کرنے میں کامیاب رہے۔ انہوں نے 8 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 96 بالوں پر 60 رنز بنائے۔

ادھر حارث سہیل بھی اسد شفیق کا زیادہ ساتھ نہ دے سکے اور صرف 9 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔ انہیں لستھ ایمبولدینیا نے ایل بی ڈبلیو کیا جب کہ اسد شفیق نصف سنچری بنانے میں کامیاب رہے۔

محمد رضوان چار رنز پر کمارا کی بال پر بولڈ ہو گئے۔ یاسر شاہ بغیر کھاتہ کھولے کمارا کی بال پر ہی ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔ اس طرح پاکستان کو پے در پے دو وکٹس کا نقصان اٹھانا پڑا۔

محمد عباس بھی 179 رنز کے مجموعی اسکور پر بغیر کوئی رن بنائے آؤٹ ہو گئے۔ انہیں لستھ ایمبولدینیا نے اپنی بال پر ڈی سلوا کے ہاتھوں کیچ کرایا۔

پاکستان کا اسکور 185 رنز ہوا تو اسد شفیق بھی 63 رنز بناکر کمارا کی بال پر فرنینڈو کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہو گئے۔

آخری وکٹ کے طور پر نسیم شاہ کھیلنے آئے لیکن اسی دوران جب ٹیم کا اسکور 191 رنز تھا شاہین شاہ آفریدی 5 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے جب کہ نسیم شاہ ایک رن بناکر ناٹ آؤٹ رہے۔ یوں پاکستان کی پہلی باری 191 پر سمٹ گئی۔

دونوں ٹیموں نے دوسرے ٹیسٹ کے لیے ایک ایک تبدیلی کی ہے۔ پاکستان نے عثمان شنواری کی جگہ یاسر شاہ اور سری لنکا نے راجیتھا کی جگہ لستھ ایمبولدینیا کو کھیلنے کا موقع دیا گیا ہے۔

ایک تبدیلی کے ساتھ پاکستانی ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہے: شان مسعود، عابد علی، اظہر علی، بابر اعظم، حارث سہیل، اسد شفیق، محمد رضوان، یاسر شاہ، محمد عباس، نسیم شاہ اور شاہین شاہ آفریدی۔

مہمان ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہے: کپتان ڈیمو کرونارتنے، اوشادا فرنینڈو، کشال مینڈیس، انجیلو میتھیوز، دنیشن چندی مل، دھننجیا ڈی سلوا، نروشان ڈیکویلا، دلروان پریرا، لستھ ایمبولدینیا، وشیو فرنینڈو اور لہیرو کمارا۔

واضح رہے کہ دونوں ٹیموں کے درمیان پہلا ٹیسٹ راولپنڈی میں 11 سے 15 دسمبر کے درمیان کھیلا گیا تھا۔ میچ 3 دن تک بارش اور کم روشنی کے باعث متاثر ہوا جس کے سبب اس کا کوئی نتیجہ نہ نکل سکا۔

اس حوالے سے دونوں ٹیموں کے درمیان کراچی ٹیسٹ فیصلہ کن ثابت ہوسکتا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG