رسائی کے لنکس

’دردانہ بٹ کے ہوتے ہوئے سیٹ پر کوئی سنجیدہ نہیں رہ سکتا تھا‘


فائل فوٹو

چار دہائیوں تک پاکستان انٹرٹینمنٹ انڈسٹری پر کئی مختلف اور زندہ دل کردار ادا کرنے والی معروف فنکارہ دردانہ بٹ 83 سال کی عمر میں انتقال کر گئیں۔

دردانہ بٹ نے آنگن ٹیڑھا اور تنہائیاں جیسے لاتعداد ہٹ ڈراموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے تھے۔

نو مئی 1938 کو لاہور میں پیدا ہونے والی دردانہ بٹ کا شمار پاکستان کی ان اداکاراؤں میں ہوتا ہے جنہوں نے اپنے کریئر کے دوران اسٹیج، ٹی وی اور فلم تینوں میں کام کر کے اپنا نام بنایا۔

امریکی یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی حاصل کرنے والی دردانہ بٹ نے اپنے کریئر کا آغاز اسٹیج سے کیا تھا جس کے بعد انہوں نے ’ففٹی ففٹی‘ کے ذریعے ٹی وی کی دنیا میں قدم رکھا۔

اسی کی دہائی میں دردانہ بٹ نے ’آنگن ٹیڑھا‘ میں سلطانہ کا کردار نبھایا تھا جس کے بعد انہوں نے ’تنہائیاں‘ میں بی بی بن کر فن کے جوہر دکھائے۔

’آنگن ٹیڑھا‘ میں دردانہ بٹ کا کردار ایک ایسی عورت کا تھا جو اپنے بڑے بھائی کے ساتھ رہتی تھی اور وہ اپنے پڑوس میں رہنے والے محبوب صاحب سے بے تکلف ہوتی تھیں جو ان کی بیوی جہان آرا کو قطعاً پسند نہیں آتا۔

آنگن ٹیڑھا میں محبوب احمد کا کردار ادا کرنے والے اداکار شکیل دردانہ بٹ کے انتقال پر بہت افسردہ ہیں۔

وائس آف امریکہ سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ دردانہ بٹ ایک بہترین اداکار اور دوست تھیں۔

ان کے بقول دردانہ بٹ اپنے تمام دوستوں سے رابطے میں رہتی تھیں لیکن ان کے ساتھ ان کا رشتہ الگ ہی تھا۔ وہ نہ صرف ان کی دوست تھیں بلکہ ایک بہترین خاتون بھی تھیں جو ہمیشہ ہنستی مسکراتی رہتی تھیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ’آنگن ٹیڑھا‘ میں تو ساتھ کام کیا ہی تھا اس کے علاوہ بھی انہوں نے بہت وقت ساتھ میں گزارا تھا۔

ان کے مزید کہنا تھا کہ وہ ایک بہترین فن کارہ تھیں جن کے انتقال سے ایک ایسا خلا پیدا ہوا ہے جو شاید کبھی پورا نہ ہو سکے۔

اداکار شکیل کا کہنا تھا کہ ان کے انتقال سے سب افسردہ ہیں۔

مشہور زمانہ ڈرامہ تنہائیاں میں اداکارہ دردانہ بٹ کی اداکاری آج بھی لوگوں کو یاد ہے جس میں انہوں نے مرکزی کردار ادا کرنے والی زارا اور ثنیعہ کی آیا کا کردار ادا کیا تھا۔

نوے کی دہائی میں پرائیوٹ چینلز کے آنے کے بعد بھی دردانہ بٹ ٹی وی سے جڑی رہیں اور اپنے آخری دنوں تک متحرک رہیں۔

دردانہ بٹ نے حال ہی میں نجی ٹی وی چینل ’اے آر وائی‘ پر نشر ہونے والے ڈرامے 'رسوائی' میں بھی اداکاری کے جوہر دکھائے تھے جس میں ان کا کردار سب کو بے حد پسند آیا تھا۔

’رسوائی‘ میں مرکزی کردار ادا کرنے والی اداکارہ ثنا جاوید کا کہنا تھا کہ دردانہ بٹ کے ساتھ گزارا ہوا وقت وہ ہمیشہ یاد رکھیں گی۔

وائس آف امریکہ سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ دردانہ بٹ کے ہوتے ہوئے سیٹ پر کوئی سنجیدہ نہیں رہ سکتا تھا۔

ثنا جاوید کے بقول دردانہ بٹ ہمارے ملک کی ایک نامور اداکارہ ہونے کے ساتھ ساتھ ایک بہترین کو اسٹار تھیں۔ ان کو ان کے ساتھ ایک نہیں بلکہ دو ڈراموں میں کام کرنے کا موقع ملا جس میں رسوائی قابل ذکر ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ سیٹ پر دردانہ بٹ سب کے ساتھ ایک جیسا برتاؤ کرتی تھیں۔ ان کے ساتھ لگتا ہی نہیں تھا کہ آپ کسی پرانے اداکار کے ساتھ کام کر رہے ہیں۔ وہ ہر کسی سے اسی طرح کی باتیں کرتی تھیں۔

دردانہ بٹ کے انتقال پر جہاں سینیٹر فیصل جاوید خان نے ٹوئٹر کے ذریعے انہیں خراجِ تحسین پیش کیا وہیں شیری رحمٰن نے بھی سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ان کی تعریف کی۔

اداکار زاہد احمد جنہوں نے دردانہ بٹ کے ساتھ ٹیلی فلم ’دل دیا گلاں‘ میں کام کیا تھا، انہوں نے بھی ان کے انتقال پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

صحافی آمنہ حیدر عیسانی اور مہوش اعجاز نے بھی دردانہ بٹ کے انتقال کو افسوس ناک قرار دیا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG