رسائی کے لنکس

logo-print

پیوٹن 'بدعنوانی کی علامت' ہیں: امریکی عہدے دار


بی بی سی کے پروگرام، 'پینوراما' میں، امریکی محکمہ خزانہ کے ایک عہدے دار نے کہا ہے کہ ''امریکہ اس بات سے آگاہ ہے کہ سرکاری اثاثوں کا استعمال کرتے ہوئے، پیوٹن اپنے دوستوں اور اپنے قریبی ساتھیوں کو دولت مند بناتے ہیں، جب کہ دیگر کو اپنا دوست نہیں خیال کرتے۔۔۔۔"

امریکی محکمہ خزانہ کے ایک اعلیٰ عہدے دار نے روسی صدر ولادیمیر پیوٹن پر بدعنوانی کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ روسی رہنما اپنے عہدے کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے دوسروں کی حق تلفی کرتے ہیں، جب کہ اپنے دوستوں اور اتحادیوں کو امیر تر بنا رہے ہیں۔

ایڈم سبین امریکی محکمہ مالیات کی جانب سے روس کے خلاف عائد کردہ تعزیرات کی نگرانی کرتے ہیں۔ وہ کہتے ہیں کہ امریکی حکومت 'کئی سالوں سے' جانتی ہے کہ پیوٹن بدعنوانی میں ملوث ہیں۔

نجی تقاریب میں دیگر امریکی عہدے داروں نے بھی نامہ نگاروں سے گفتتگو میں، اِسی قسم کے بیانات دیے ہیں۔ لیکن، سرکاری سطح پر شاذ ہی ایسی بات کہی گئی ہو۔ شام اور دیگر معاملات میں امریکہ روسی مدد کا خواہاں ہے۔

بی بی سی کے پروگرام، 'پینوراما' میں، سبین نے کہا ہے کہ ''امریکہ آگاہ ہے کہ سرکاری اثاثوں کا استعمال کرتے ہوئے، پیوٹن اپنے دوستوں اور اپنے قریبی ساتھیوں کو دولت مند بناتے ہیں، جب کہ دیگر کو اپنا دوست نہیں خیال کرتے۔ آیا یہ روسی کی توانائی کی دولت ہو، یا پھر ملک کےسرکاری ٹھیکے، وہ اُنہی کو دیتے ہیں جن کے بارے میں اُن کا خیال ہے کہ وہ اُن کے خدمت گزار ہوں گے، دوسروں کو نظرانداز کرتے ہیں جو اُن کے قریب نہیں۔ میرے نزدیک یہ صاف بدعنوانی ہے''۔

بی بی سی کے مطابق، پیوٹن کے ایک ترجمان نے اِن الزامات کو''بس سے باہر'' قرار دیا ہے۔ وہ روسی حکومت کے ترجمان کے حوالے سے بتاتے ہیں کہ، ''اِن میں سے کسی بھی سوال یا معاملے کا جواب دیا جانا ضروری نہیں، کیونکہ یہ خیالی باتیں ہیں''۔

XS
SM
MD
LG