رسائی کے لنکس

logo-print

روس سے ہتھیار کیوں خریدے، چین پر امریکی پابندی لگ گئی


روسی فوجی لڑاکا طیارے ایس یو 25 میں ہتھیار لوڈ کر رہے ہیں۔ فائل فوٹو

امریکہ نے جمعرات کے روز چین کے ایک فوجی ادارے پر پابندی لگانے کا اعلان کیا ہے۔

چین کے ایک فوجی ادارے پر الزام ہے کہ اس نے روس سے ہتھیار خریدے ہیں۔ اس کا یہ اقدام روس پر امریکی پابندیوں کی خلاف ورزی ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ نے کہا ہے کہ وہ فوری طور پر چینی فوج کے ایک یونٹ پر پابندی کا اطلاق کر دے گا۔ فوج کا یہ یونٹ روس کے ہتھیار برآمد کرنے والے ادارے روسوبورون ایکسپورٹ کے ساتھ دفاعی ٹیکنالوجی کی خرید کا نگران ہے۔

محکمہ خارجہ نے کہا ہے کہ چین نے روس سے ایس یو 25 فائٹر جیٹ اور زمین سے فضا میں مار کرنے والے ایس 400 میزائل خریدے ہیں۔

چین کی یہ خریداری پابندیوں سے متعلق امریکہ کے 2017 کے قانون کی خلاف ورزی ہے۔ ان پابندیوں کا مقصد سن 2016 میں امریکی صدارتی انتخابات میں روس کی مداخلت پر اسے سزا دینا ہے۔

اس قانون کے تحت روس کی دفائی صنعت کے ساتھ بڑے پیمانے پر لین دین کرنے والے تیسرے فریق پر پابندیاں لگ سکتی ہیں۔

یہ پہلا موقع ہے کہ امریکہ نے اپنی ان تازہ ترین پابندیوں کا اطلاق روس سے فوجی ہتھیار خریدنے والے کسی ملک پر کیا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG