رسائی کے لنکس

logo-print

شام میں انسانی حقوق کے سرگرم کارکنوں کا کہنا ہے کہ شمال مغربی صوبے ادلیب میں گولہ باری سے ایک ہی خاندان کے نو افراد سمیت 10 لوگ ہلاک ہو گئے۔

برطانیہ میں قائم تنظیم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کا کہنا ہے کہ منگل کو ہلاک ہونے والوں میں دو بچے بھی شامل ہیں۔ تاحال یہ واضح نہیں ہو سکا کہ مارٹر گولے کس نے داغے۔

ایک روز قبل سرگرم کارکنوں کا کہنا تھا کہ ادلیب ہی کے علاقے میں سیکورٹی فورسز کی عمارتوں کے نزدیک ہونے والے دوہرے بم دھماکوں میں کم ازکم 20 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

کارکنوں کے مطابق ادلیب میں انٹیلی جنس دفاتر پر حملے شام کی فوج اور فضائیہ نے کیے۔ تاہم شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کا کہنا تھا کہ یہ دھماکے خود کش حملہ آوروں کی کارروائی تھی اور ہلاکتوں کی تعداد 9 ہے جب کہ 100 افراد زخمی ہوئے۔

XS
SM
MD
LG