رسائی کے لنکس

logo-print

امریکی فوجی کو جنسی زیادتی کے جرم میں دس سال قید


امریکی فوجی کو جنسی زیادتی کے جرم میں دس سال قید

جنوبی کوریا کی ایک عدالت نے جنسی زیادتی کے الزام میں ایک امریکی فوجی کو 10 سال قید کی سزا سنائی ہے جو کہ گزشتہ 20 سالوں میں کسی بھی امریکی اہلکار کو یہاں دی جانے والی سب سے بڑی سزا ہے۔

منگل کو عدالت نے یہ سزا 18 سالہ ایک لڑکی کو سیول کے قریب تین گھنٹے تک ایذا پسندی اور جنسی تشدد کا نشانہ بنانے کے الزام میں سنائی۔ امریکی فوجی کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔

ستمبر میں پیش آنے والے اس واقعے پر اعلیٰ امریکی سفارتکاروں نے معذرت پیش کی تھی۔ اس بڑی سزا سے قبل 1993ء میں ایک امریکی فوجی کو جنوبی کوریائی خاتون کے قتل کے الزام میں سزائے موت سنائی گئی تھی۔

امریکہ کے تقریباً 28500 فوجی شمالی کوریا کی طرف سے کسی ممکنہ خطرے سے نمٹنے میں مدد دینے کے لیے جنوبی کوریا میں موجود ہیں۔

فوجیوں کی طرف سے مجرمانہ فعل دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی کی ایک بڑی وجہ رہے ہیں۔ امریکی بکتر بند گاڑی کی زد میں آکر اسکول کی دو بچیوں کی ہلاکت کے بعد 2002ء میں بڑے پیمانے پر احتجاجی مظاہرے دیکھنے میں آئے تھے۔

منگل کے روز مقدمے میں استغاثہ نے مزید کڑی سزا کی استدعا کی تھی لیکن عدالت کا کہنا تھا کہ 21 سالہ مجرم کو اپنے کیے پر افسوس اور ماضی میں اس کے کسی مجرمانہ ریکارڈ کے نہ ہونے کو مدنظر کر یہ فیصلہ سنایا گیا۔

XS
SM
MD
LG