رسائی کے لنکس

logo-print

چھ مارچ سے محکمہٴ خارجہ کی نیوز بریفنگ کا آغاز ہوگا


اخباری بریفنگ روزانہ کی بنیاد پر ٹیلی وژن پر براہِ راست نشر کی جاتی رہی ہیں، جنھیں اہم بین الاقوامی بحرانوں اور دنیا بھر کے حالات کے بارے میں، امریکہ کے اتحادی اور مخالفین غور سے سنا کرتے ہیں

محکمہٴ خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ چھ مارچ سے نیوز بریفنگ کا سلسلہ دوبارہ شروع ہوجائے گا۔

وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن کی جانب سے عہدہ سنبھالنے کے بعد سفارت کاروں کو انتظار تھا، جب کہ بیرون ملک کئی کلیدی معاملات پر امریکی مؤقف کے بارے میں ابہام پیدا ہونے لگا تھا۔

ماضی میں اخباری بریفنگ روزانہ کی بنیاد پر ٹیلی وژن پر براہِ راست نشر کی جاتی رہی ہیں، جنھیں اہم بین الاقوامی بحرانوں اور دنیا بھر کے حالات کے بارے میں، امریکہ کے اتحادی اور مخالفین غور سے سنا کرتے ہیں۔

لیکن، 20 جنوری سے یہ سلسلہ بند رہا ہے، جب سے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے عہدہ سنبھالا ہے، جو عشروں کی روایت کے برعکس معاملہ تھا۔ یہ بات بریفنگز کے متن سے بخوبی جانی جا سکتی ہے، جو آن لائن موجود ہیں۔

محکمہٴ خارجہ کی آخری نیوز بریفنگ 19 جنوری کو ہوئی تھی، جو براک اوباما کی صدارت کا آخری دِن تھا۔ سوال و جواب کی نشستوں کی مدد سے اخباری نمائندے اور پریس سے وابستہ افراد اور بیرونِ ملک تعینات سفارت کار امریکی خارجہ پالیسی کی نزاکتوں سے مانوس ہوتے ہیں۔

امریکی محکمہٴ خارجہ کے قائم مقام ترجمان، مارک ٹونر نے بتایا ہے کہ ’’محکمہ چھ مارچ سے پریس بریفنگ کا سلسلہ دوبارہ شروع کر رہا ہے۔ ہم ذرائع ابلاغ کی جانب سے کیے گئے سوالوں کے جواب دیں گے، اور جاری سلسلے کے طور پر بریکنگ نیوز کے معاملات پر ضروری رد عمل کا اظہار کیا جائے گا۔

XS
SM
MD
LG