رسائی کے لنکس

جسم کے 80 فی صد حصے پر ٹیٹو بنوانے والا 'ڈیول پراڈو'


نہ صرف مشل نے جسمانی تبدیلیاں کروائی ہیں بلکہ ان کی 36 سالہ بیوی کیرول پراڈو جو 'ڈیمن وومن' کے نام سےجانی جاتی ہیں، انہوں نے بھی اپنے جسم کو تبدیل کیا ہے۔

دنیا میں بعض افراد کو جسم پر طرح طرح کے ٹیٹو بنوانے کا شوق ہوتا ہے لیکن وہیں چند افراد ایسے بھی ہیں جو عام ڈیزائن والے ٹیٹو نہیں بلکہ دوسروں سے الگ تھلگ اور منفرد نظر آنے کے لیے جسمانی تبدیلیاں کروانے کا شوق رکھتے ہیں۔

آج ہم آپ کو ایک ایسے ہی شخص کے بارے میں بتائیں گے جنہوں نے اپنے جسم کے 80 فی صد حصے کو ٹیٹو اور جسمانی تبدیلیاں کروا کر سب سے منفرد کر لیا ہے۔

خبر رساں ادارے 'رائٹرز' کے مطابق برازیل کے شہر ساؤ پاؤلو میں مقیم ٹیٹو آرٹسٹ مشل فارو پراڈو نے 'شیطان' کی طرح نظر آنے کے لیے اپنے جسم میں متعدد تبدیلیاں کروائی ہیں۔

مشل فارو پراڈو سوشل میڈیا پر 'ڈیاباؤ پراڈو' اور 'ڈیول پراڈو' کے نام سے مشہور ہیں۔

انہوں نے اپنے جسم کے 80 فی صد حصے کو تبدیل کر دیا ہے اور ان تبدیلیوں میں ناک چھوٹی، نوکیلے دانت، سر پر سینگ لگوانا اور ہاتھ پنجے کی طرح لگنے کے لیے ایک انگلی بھی کٹوا لی ہے۔

برازیلین ٹیٹو آرٹسٹ مشل فارو پراڈو سوشل میڈیا پر 'ڈیاباؤ پراڈو' یا 'ڈیول پراڈو' کے نام سے مشہور ہیں۔
برازیلین ٹیٹو آرٹسٹ مشل فارو پراڈو سوشل میڈیا پر 'ڈیاباؤ پراڈو' یا 'ڈیول پراڈو' کے نام سے مشہور ہیں۔

'ڈیول پراڈو' کا کہنا ہے کہ انہوں نے شیطان کی طرح دکھنے کے بارے میں کبھی نہیں سوچا تھا۔

ان کے بقول "مجھے برائی نے اپنی طرف متوجہ کیا۔"

ان کا کہنا تھا کہ وہ پہلے ایک بے گھر اور نشے کے عادی شخص تھے اور ان مشکل برسوں نے انہیں ایک بہتر انسان بنانے میں مدد کی۔

مشل فارو پراڈو کا کہنا ہے کہ وہ خوف ناک دکھنے کے باوجود ایک اچھے دل کے مالک ہیں۔

مشل نے نہ صرف خود جسمانی تبدیلیاں کروائی ہیں بلکہ ان کی 36 سالہ بیوی کیرول پراڈو جو 'ڈیمن وومن' کے نام سےجانی جاتی ہیں، نے بھی اپنے جسم کو تبدیل کیا ہے۔

مشل فارو پراڈو کا کہنا ہے کہ وہ خوف ناک دکھنے کے باوجود ایک اچھے دل کے مالک ہیں۔
مشل فارو پراڈو کا کہنا ہے کہ وہ خوف ناک دکھنے کے باوجود ایک اچھے دل کے مالک ہیں۔

برازیلین جوڑے کے مطابق انہوں نے گزشتہ پانچ برسوں کے دوران اپنے جسم میں انتہائی سخت جسمانی تبدیلیاں کروائی ہیں۔

اگرچہ شیطان نما دکھنے والے مشل فارو پراڈو کو تعصب اور نفرت کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ انہیں اس بات کی کوئی پرواہ نہیں کہ دوسرے ان کے بارے میں کیا سوچتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں میں جو چاہتا ہوں وہ معاشرے کی قائم کردہ مثالوں سے مختلف ہے، مجھے اس قدر محبت ملتی ہے کہ اس کے سامنے یہ نفرت چھوٹی ہو گئی ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG