رسائی کے لنکس

ٹیسٹ کرکٹ کی نووارد ٹیم افغانستان کا بھارت سے ٹاکرا


افغانستان ٹیم کے کوچ فل سمنز تربیتی سیشن میں کھلاڑیوں کو ہدایات دے رہے ہیں

افغانستان کی کرکٹ ٹیم ٹیسٹ کا درجہ حاصل کرنے کے بعد اپنا اولین ٹیسٹ کل بھارت کے خلاف بنگالورو میں کھیل رہی ہے۔ یوں ٹیسٹ کرکٹ کی نوروارد ٹیم دنیا کی نمبر ایک ٹیم کے خلاف نبرد آزما ہو گی۔

اس موقع پر بھارت کے وزیر اعظم نرندر مودی نے اپنے خاص پیغام میں کہا ہے کہ یہ ایک تاریخی موقع ہے اور اُن کیلئے یہ نہایت خوشی کی بات ہے کہ افغانستان نے اپنا اولین ٹیسٹ میچ کھیلنے کیلئے بھارت کا انتخاب کیا ہے۔

بھارتی وزیر اعظم مودی کا افغان بھارت ٹیسٹ میچ کے موقع پر بیان
بھارتی وزیر اعظم مودی کا افغان بھارت ٹیسٹ میچ کے موقع پر بیان

​وزیر اعظم مودی نے کہا کہ افغان کرکٹ ٹیم نے بہت کم عرصے میں بڑی کامیابیاں حاصل کی ہیں اور کئی ٹیسٹ ٹیموں کے خلاف فتوحات بھی حاصل کی ہیں اور اب کرکٹ افغان قوم کو متحد کرنے کی قوت بن چکی ہے۔

نرندر مودی نے اپنے پیغام میں مزید کہا کہ بھارت کیلئے یہ فخر کی بات ہے کہ وہ افغاستان کرکٹ ٹیم کے اس سفر میں اُس کے ساتھ کھڑی رہی ہے۔ اپنے پیغام میں بھارتی وزیر اعظم نے افغانستان اور بھارت کے کرکٹ بورڈز کو یہ تاریخی میچ بھارت میں منعقد کرنے پر مبارکباد دی۔

دونوں ٹیموں کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کرتے ہوئے نرندر مودی نے کہا کہ یہ ٹیسٹ میچ دونوں ملکوں کے درمیان دوستی کا عظیم مظہر ہو گا۔

افغانستان کی ٹیم نے ٹیسٹ کا درجہ حاصل کرنے کے بعد سے کرکٹ کے تمام فارمیٹ میں بہترین کھیل کا مظاہرہ کیا ہے اور متعدد ٹیسٹ ٹیموں کے خلاف فتوحات حاصل کی ہیں۔ یوں بھارتی کرکٹ ٹیم اس تاریخی ٹیسٹ سے قبل کچھ نروس دکھائی دے رہی ہے کیونکہ افغانستان کی ٹیم سپن بالنگ کے شعبے میں خاصی مضبوط دکھائی دیتی ہے اور ماہرین کی رائے کے مطابق سپن کو کھیلنے میں بھارتی بلے بازوں کو مشکلات پیش آتی ہیں۔ تاہم بیٹنگ کے شعبے میں بھارتی ٹیم خاصی مضبوط ہے۔ بھارتی ٹیم میں آل راؤنڈر ہاردک پانڈیے، روندر جدیجا، ایشون اور دنیش کارتھک خاصی فارم میں دکھائی دیتے ہیں۔ ٹیم میں وراٹ کوہلی کی کرون نائر کو شامل کیا گیا ہے۔

دوسری جانب افغانستان کی ٹیم میں مشہور بلے باز محمد شہزاد نے دھواں دار بیٹنگ کرنے کے حوالے سے شہرت حاصل کی ہے۔ اُن کے علاوہ راشد خان کی گگلی بھارتی بلے بازوں کو خاصا پریشان کر سکتی ہے۔ اصغر سٹانکزئی ٹیم کی قیادت کریں گے جو خود بھی ایک منجھے ہوئے کھلاڑی ہیں اور اُنہوں نے افغان ٹیم کو ورلڈ کپ کے کوالیفائینگ ٹورنمنٹ میں سر فہرست لانے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

افغانستان ٹیم کے کوچ فل سمنز کا کہنا ہے کہ محمد شہزاد کی فٹنس ایک روزہ میچوں کیلئے بہترین رہی ہے۔ تاہم ٹیسٹ میچ بالکل مختلف فارمیٹ ہے اور اُنہیں اس کیلئے اپنی فٹنس ثابت کرنا ہو گی۔ بھارت کے خلاف میچ میں وکٹ کیپنگ کے فرائض افسر زازائی سنبھالیں گے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ بنگالورو کی وکٹ عام طور پر پیس بالروں کیلئے زیادہ ساز گار ہوتی ہے۔ لہذا یہ دیکھنا ہو گا کہ جذبے سے بھرپور افغانستان کی یہ نئی ٹیم اپنی تاریخ کے اس اولین ٹیسٹ میں دنا کی نمبر ون ٹیسٹ ٹیم کے خلاف کیسی کارکردگی کا مظاہرہ کرتی ہیں۔

دونوں ٹیموں کی حتمی لائن اپ ان کھلاڑیوں سے منتخب کی جائے گی:

افغانستان: احمد شہزاد (کپتان)، جاوید احمدی، رحمت شاہ، اصغر سٹانکزئی، ناصر جمال، حشمت اللہ شہیدی، محمد نبی، افسر زازائی (وکٹ کیپر)، راشد خان، امیر حمزہ، ظہیر خان، یامین احمدزئی، وفادار اور مجیب الرحمان۔

بھارت: ایم وجے، شکھر دھون، کے ایل راہول، چیتیشور پجارا، اجنکیا راہانے (کپتان)، کرون نائر، دنیش کارتھک (وکٹ کیپر)، ہردک پانڈیے، ایشون، روندر جدیجا، ایشانت شرما اور اُمیش یادو۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG