رسائی کے لنکس

logo-print

جلال آباد میں خود کش حملہ، 16 افراد ہلاک


حملے کا نشانہ بننے والی تعمیراتی کمپنی کے دفتر کے نزدیک ایک سکیورٹی اہل کار تعینات ہے۔

افغانستان کے مشرقی شہر جلال آباد میں ایک خود کش حملے اور اس کے بعد فائرنگ میں 16 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

صوبہ ننگر ہار کے گورنر کے ترجمان عطااللہ خوگیانی نے خبر رساں ادارے 'رائٹرز' کو بتایا ہے کہ حملہ جلال آباد کے ہوائی اڈے کے نزدیک واقع ایک نجی تعمیراتی کمپنی کے دفتر پر کیا گیا۔

ترجمان کے مطابق حملے کا آغاز دو خود کش حملہ آوروں نے کیا جنہوں نے خود کو کمپنی کے دروازے پر دھماکے سے اڑا لیا۔ خود کش حملے کے بعد تین مسلح افراد نے جائے وقوعہ پر فائرنگ بھی کی۔

خوگیانی نے بتایا ہے کہ حملے میں 16 افراد ہلاک ہوئے ہیں جن میں کمپنی کے کئی محافظ اور ملازمین شامل ہیں۔

حملے میں دونوں خود کش حملہ آور بھی مارے گئے جب کہ ان کے تین ساتھی سیکورٹی فورسز اور کمپنی کے محافظوں کی جوابی کارروائی میں ہلاک ہو گئے۔

حملے میں کل 10 افراد زخمی بھی ہوئے ہیں جنہیں طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔ ننگر ہار کی صوبائی کونسل کے ایک رکن سہراب قادری نے 'رائٹرز' کو بتایا ہے کہ حملے میں زخمی ہونے والے کمپنی کے چار ملازمین کی حالت تشویش ناک ہے۔

تاحال کسی نےحملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

جلال آباد صوبہ ننگر ہار کا دارالحکومت ہے جس کی سرحد پاکستان سے ملتی ہے۔

ننگرہار طالبان کا ایک مضبوط گڑھ رہا ہے لیکن گزشتہ کچھ برسوں سے صوبے میں شدت پسند تنظیم داعش بھی سرگرم ہے جو اب تک افغانستان میں کئی شہری اہداف اور اجتماعات کو نشانہ بنا چکی ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG