رسائی کے لنکس

اٹک: اٹامک انرجی کمیشن کے سویلین اہلکاروں کی بس کے قریب بم دھماکہ


اسلام آباد سے 85 کلومیٹر کے فاصلے پر شہر اٹک میں بسال روڈ پر ڈھوک گاما کے قریب دن کے وقت ایک زوردار بم دھماکے کے نتیجے میں 2 افراد ہلاک جب کہ 13 زخمی ہوئے۔

دھماکے کے فوری بعد، ڈی پی او اٹک اور آر پی او راولپنڈی فخر سلطان راجہ جائے حادثہ پہنچے اور پولیس اہلکاروں کی مدد سے شواہد اکٹھے کئے اور زخمی افراد کو مختلف اسپتالوں میں منتقل کردیا گیا۔

آر پی او راولپنڈی وصال فخر سلطان نے واقعے سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ حساس ادارے کے ملازم چھٹی کرکے گھروں کو جا رہے تھے، بس سپیڈ بریکر عبور کرنے کے لئے آہستہ ہوئی تو حملہ آور کی طرف سے فائرنگ شروع کر دی گئی اور بس میں سوار ملازمین کو نشانہ بنایا گیا جس میں متعدد افراد زخمی ہوئے۔

حملہ آور کی جانب سے فائرنگ رکتے ہی ڈرائیور نے بس سے اتر کو فائرنگ کرنے والے شخص کو پکڑنے کی کوشش کی۔ تاہم، حملہ آور نے بارودی مواد کے ذریعے خود کو اڑا لیا جس کے نتیجے میں بس ڈرائیور اور ایک راہگیر شہید ہوگئے جب کہ دھماکے میں حملہ آور بھی ہلاک ہوگیا۔

حملہ کے بعد سیکیورٹی اداروں نے علاقہ کو گھیرے میں لیکر سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔

اٹک کا علاقہ حساس علاقہ شمار کیا جاتا ہے جس کے اطراف میں ملک کی بعض حساس تنصیبات بھی موجود ہیں اور اس علاقہ میں آنے جانے والے تمام افراد کی کڑی نگرانی کی جاتی ہے۔ لیکن، ماضی میں پنجاب کے صوبائی وزیر داخلہ کرنل ریٹائرڈ شجاع خانزادہ کے گھر پر بھی خودکش حملہ کیا گیا تھا جس میں شجاع خانزادہ سمیت 18 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

پاکستان میں ماضی کے مقابلے میں سیکیورٹی کی صورتحال بہتر ہوئی ہے۔ تاہم، ابھی بھی شہروں کے اندر بعض علاقوں میں موجود دہشت گردوں کے سہولت کار ایسی کارروائیوں کے لیے موجود ہیں اور دہشت گردوں کی معاونت کر رہے ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG