رسائی کے لنکس

logo-print

بائیڈن نے وزارت داخلہ کے لیے ڈیب ہالینڈ کو چن لیا


امریکہ کے نومنتخب صدر جو بائیڈن نے نیو میکسیکو سے تعلق رکھنے والی ڈیب ہالینڈ کو وزیرِ داخلہ کے عہدے کے لیے اپنی ٹیم میں منتخب کر لیا ہے اور جلد ان کو باقاعدہ نامزد کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

ہالینڈ پہلی خاتون وزیرِ داخلہ ہوں گی جو قدیمی امریکی قبائل سے تعلق رکھتی ہیں۔

محکمہ داخلہ ملک میں وفاقی طور پر منظم 600 قبائل پر گہرا اثرو نفوذ رکھتا ہے۔ ادارہ اس کے ساتھ وفاقی اراضی بشمول وائلڈ لائف پارکس، پانی کے وسائل، معدنی وسائل کی بھی نگرانی کرتا ہے۔ یہ تمام امور 60 سالہ ڈیب کی ذمہ داریوں کا حصہ ہوں گے۔

امریکہ میں رہنے والے قبائل نے ہالینڈ کی نامزدگی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے اسے تاریخی فیصلہ قرار دیا ہے۔

ہالینڈ 2018 میں امریکی کانگریس کی رُکن منتخب ہوئی تھیں جب کہ وہ ہاؤس کمیٹی برائے قدرتی وسائل کی چیئرپرسن بھی ہیں۔ اس سے قبل وہ نیو میکسیکو میں ڈیمو کریٹک پارٹی کی سربراہ تھیں۔

بائیڈن نے مائیکل ریگن کو ماحولیاتی تحفظ کے ادارے کا سربراہ نامزد کیا ہے۔ ریگن اس سے قبل نارتھ کیرولائنا کی ماحولیاتی ایجنسی کے سربراہ کے طور پر کام کر رہے تھے۔

مائیکل ریگن (فائل فوٹو)
مائیکل ریگن (فائل فوٹو)

امریکی ذرائع ابلاغ کے مطابق ماحول کے تحفظ کے لیے کام کرنے والی کئی تنظیموں نے ریگن کی نامزدگی پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔

ریگن سابق صدر بل کلنٹن اور اوباما کے ادوار میں بھی انوائرمنٹ پروٹیکشن ایجنسی (ای پی اے) میں مختلف ذمہ داریاں نبھاتے رہے ہیں۔

خیال رہے کہ نو منتخب امریکی صدر جو بائیڈن نے کئی محکموں کے لیے نامزدگیاں کر دی ہیں۔

بائیڈن نے سابق امریکی جنرل لائیڈ آسٹن کو وزیرِ دفاع، اینٹنی بلنکن​ کو وزیرِ خارجہ، ہاویئر بسیرا​ کو وزیرِ صحت، پیٹ بٹیجج کو وزیر ٹرانسپورٹ نامزد کیا ہے۔

XS
SM
MD
LG