رسائی کے لنکس

logo-print

اسرائیل کا دمشق ہوائی اڈے پر میزائل حملہ


شامی خبر رساں ادارے نے بتایا ہے کہ اسرائیلی لڑاکا طیاروں نے جمعے کے روز دمشق پر میزائل برسائے، جس پر شام کی دفاعی افواج نے جوابی فائر کرکے ان میں سے زیادہ تر کو ناکارہ بنا دیا۔

صنعا نیوز ایجنسی نے فوجی ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ ’’جارحیت کے نتیجے میں دمشق ہوائی اڈے کے ایک گودام کو نقصان پہنچا ہے‘‘۔

خبر میں بتایا گیا ہے کہ یہ حملہ 11.15 بجے رات (2115جی ایم ٹی) پر کیا گیا۔

سرکاری تحویل میں کام کرنے والے شامی ذرائع ابلاغ کی فٹیج میں فضائی دفاع کی فائرنگ دکھائی گئی ہے، جس میں رات کے اندھیرے میں شعائیں ابھرتی نظر آ رہی ہیں۔ ایک وڈیو میں دھماکے کے آواز سنائی دیتی ہے۔

اسرائیل نے شام میں کئی حملے کیے ہیں جو اس کوشش کا حصہ ہے کہ ایران کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کو کم کیا جائے، جہاں 2011ء میں چھڑنے والی لڑائی کے بعد ایران صدر بشار الاسد کی حمایت کر رہا ہے۔

شامی سرکاری ذرائع ابلاغ کی رپورٹوں کے مطابق، اسرائیل نے پچھلا حملہ 25 دسمبر کو کیا تھا، جب میزائل حملے میں تین شامی فوجی زخمی ہوئے تھے۔

ستمبر میں ایک اعلیٰ اسرائیلی اہلکار نے کہا تھا کہ گذشتہ دو برسوں کے دوران اسرائیل نے شام میں ایرانی اہداف پر 200 سے زائد حملے کیے ہیں۔

ایرانی اور ایران کی پشت پناہی والے گروپوں نے، جن میں لبنان کی حزب اللہ شامل ہے، لڑائی کے دوران الاسد کی حکومت کی حمایت میں نفری تعینات کر رکھی ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG