رسائی کے لنکس

logo-print

توہین آمیز طرز بیان پر جنید جمشید نے معافی مانگ لی


جنید جمشید کے طرز بیان کے خلاف مذہبی تنظیموں کی جانب سے پچھلے دو دنوں سے کراچی میں مظاہرے اور احتجاج جاری ہے۔ مظاہرین جنید جمشید کے خلاف مقدمہ درج کرنے اور انہیں گرفتار کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں

ماضی کے پاپ سنگر اور اس وقت نعت خوانی کے لئے مشہور جنید جمشید نے ایک مذہبی بیان پر معافی طلب کرلی ہے۔ سوشل میڈیا پر جاری ایک ویڈیو پیغام میں انھوں نے کہا ہے کہ، ’ان کی لاعلمی اور غیر دانستگی میں ایسا ہوا ہے۔ اس بیان سے جن لوگوں کی دل آزاری ہوئی ہے میں ان سے معذرت خواہ ہوں‘۔

اپنے پیغام میں ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہ ان تمام افراد کے شکر گزار ہیں، جنہوں نے غلطی کی نشاندہی کی۔ پیغام میں انہوں نے اللہ تعالیٰ سے بھی معافی مانگی ہے۔

دوسری جانب، ان کے مذکورہ طرز بیان کے خلاف مذہبی تنظیموں، سنی تحریک (بلال قادری گروپ) اور جمعیت علمائے پاکستان کی جانب سے پچھلے دو دنوں سے کراچی میں مظاہرے اور احتجاج جاری ہے۔ ان جماعتوں کی جانب سے پیر اور منگل کو کراچی پریس کلب، نجی ٹی وی چینل کے دفتر اور دیگر مقامات پر مظاہرے کئے گئے۔

سنی تحریک کے رہنماوٴں بلال سلیم قادری اور شکیل قادری نے مطالبہ کیا ہے کہ جنید جمشید کے خلاف 295 بی اور295 سی کے تحت مقدمہ درج کرکے انہیں گرفتار کیا جائے۔

مظاہرے میں شریک تحریک کے کارکنوں نے پلے کارڈز اور بینرز بھی اٹھا رکھے تھے جن پر جنید جمشید کے خلاف مختلف نعرے درج تھے۔

سنی تحریک کا یہ بھی کہنا ہے کہ ’جنید جمشید نے اسلام کی نہایت ہی معتبر ترین ہستیوں کے خلاف غیر مناسب زبان استعمال کی ہے، جبکہ ان کا طرز بیان بھی درست نہیں۔ ان کا یہ عمل معتبر اور اعلیٰ ترین شخصیات کی تضحیک اور گستاخی کے زمرے میں آتا ہے۔ اس سے اہل اسلام کے جذبات مجروح ہوئے ہیں‘۔

وی او اے کے نمائندے نے جنید جمشید کا موٴقف جاننے کے لئے ان سے رابطے کی کئی کوششیں کیں۔ تاہم، رابطہ ممکن نہ ہوسکا۔

جنید جمشید کا پروگرام اور معافی نامے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر منگل کی شام تک ’وائرل‘ بنی ہوئی تھی۔ تاہم، رات گئے تک کچھ ویب سائٹس سے یہ ویڈیو ہٹائے جانے کی بھی اطلاعات موصول ہوئیں۔

جنید جمشید کے خلاف مقدمہ درج ہونے کا دعویٰ
ادھر ایک غیر ملکی ادارے نے اپنی ایک رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ جنید جمشید کے خلاف مذہبی ہستیوں کی توہین کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ دعوے کے مطابق، مقدمہ سنّی تحریک کے رہنما محمد مبین قادری کی مدعیت میں کراچی کے علاقے تھانہ رسالہ کی حدود میں درج کیا گیا ہے۔

رپورٹ میں رسالہ تھانے کے ایس ایچ او مدد علی زرداری کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ مدعی نے مقدمے کے اندراج کے لیے عدالت سے رجوع کیا تھا جس پر ڈسٹرکٹ سیشن جج (جنوبی) نے درخواست گزاروں کے بیانات سننے کے بعد جنید جمشید کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا۔ مقدمے کے بعد، ملزم کی گرفتاری کا مرحلہ آتا ہے۔

XS
SM
MD
LG