رسائی کے لنکس

لندن کی زیر زمین ٹرین کے بم دھماکوں میں ایک نوجوان گرفتار


بم دھماکوں کا نشانہ بننے والا لندن کا پارسنز گرین ٹرین سٹیشن۔ 16 ستمبر 2017

برطانوی پولیس نے جمعے کے روز ایک 18 سالہ نوجوان کو لندن کی زیر زمین مسافر ٹرین میں بم دھماکے کرنے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

پچھلے ہفتے ہونے والے اس حملے میں 20 افراد زخمی ہو گئے تھے۔

پولیس نے نوجوان پر اقدام قتل اور بم دھماکوں کے الزامات عائد کیے ہیں۔

نوجوان کی شناخت احمد حسن کے نام سے ظاہر کی گئی ہے اور بتایا گیا ہے کہ اس کا تعلق عراق سے ہے۔ اسے ڈوور بندرگاہ سے گرفتار کیا گیا جہاں سے فرانس جانے کے لیے فیری سروس چلتی ہے۔

حسن کی گرفتاری کے بعد پولیس نے ایک مضافاتی علاقے کے ایک مکان میں ایک جوڑے کی گرفتاری کے چھاپے مارے ۔ احمد حسن ان کے پاس رہ رہا تھا۔ جوڑے کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ اس نے کئی اور پناہ گزین بچوں کو اپنے پاس رکھا ہوا تھا۔

اس سے پہلے بم دھماکوں کے سلسلے میں پولیس نے مغربی لندن سے ایک 21 سالہ نوجوان اور ساؤتھ ویلز سے 48 سالہ شخص کو گرفتار کیاتھا جنہیں اب رہا کر دیا گیا ہے۔ جب کہ حسن سمیت چار افراد ابھی تک پولیس کی حراست میں ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وہ تحقیقات جاری رکھے ہوئے ہے اور ملک بھر میں کئی عمارتوں پر چھاپے مار رہی ہے۔

15 ستمبر کو لندن کے پارسنز گرین اسٹیشن پر گھریلو ساختہ بم دھماکے میں کئی افراد زخمی ہو گئے تھے۔ بم کو ایک شاپنگ بیگ میں چھپا کر نصب کیا گیا تھا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG