رسائی کے لنکس

logo-print

پاکستان کرکٹ ٹیم انگلینڈ روانہ، 14 دن قرنطینہ میں گزارے گی


فائل فوٹو

پاکستان کرکٹ ٹیم 20 کھلاڑیوں اور عملے کے 11 ارکان سمیت انگلینڈ کے دورے کے لیے اتوار کی صبح لاہور سے مانچسٹر روانہ ہو گئی ہے۔ پاکستانی ٹیم خصوصی طیارے کے ذریعے روانہ ہوئی ہے۔

انگلینڈ روانہ ہونے والے کھلاڑیوں میں اظہرعلی (کپتان)، بابر اعظم (نائب کپتان)، عابدعلی، اسد شفیق، فہیم اشرف، فواد عالم، افتخار احمد، عماد وسیم، امام الحق، خوشدل شاہ، محمد عباس، موسیٰ خان، نسیم شاہ، روحیل نذیر، سرفراز احمد، شاہین شاہ آفریدی، شان مسعود، سہیل خان، عثمان شنواری اور یاسر شاہ شامل ہیں۔

دونوں ممالک کے درمیان تین ٹیسٹ اور تین ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلے جائیں گے۔

یار رہے کہ پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان میچوں کی حتمی تاریخ اور مقامات کا اعلان ہونا ابھی باقی ہے۔

مانچسٹر پہنچنے کے بعد قومی اسکواڈ وورسٹرشائر روانہ ہوگا جہاں انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے زیرِ اہتمام کھلاڑیوں کی ٹیسٹنگ کی جائے گی۔

اس دوران قومی اسکواڈ 14 روز قرنطینہ میں گزارے گا تاہم یہاں انہیں پریکٹس اور ٹریننگ کی اجازت ہوگی۔ اس کے بعد قومی ٹیم 13 جولائی کو ڈربی شائر روانہ ہو جائے گی۔

کرونا وائرس کے ٹیسٹنگ کے پہلے مرحلے میں 18 کھلاڑیوں اور 11 رکنی سپورٹ اسٹاف کے ٹیسٹ منفی آئے تھے اور اب ان سب کی جمعرات کو ہونے والے ری ٹیسٹنگ کی رپورٹ بھی منفی آئی ہے۔

دیگر تین ریزرو کھلاڑیوں کے علاوہ پاکستان انڈر 19 کرکٹ ٹیم کے کپتان اور وکٹ کیپر روحیل نذیر اور فاسٹ باؤلر موسیٰ خان کے وبا کے ٹیسٹ بالترتیب جمعرات اور بدھ کو لیے گئے تھے جن کے نتائج منفی آئے ہیں لہٰذا ان دونوں کھلاڑیوں کو انگلینڈ روانہ ہونے والے پہلے گروپ میں شامل کیا گیا ہے۔

پی سی بی کے اعلامیے کے مطابق بائیں ہاتھ کے اسپنر ظفر گوہر جنہوں نے 2015 میں ایک ون ڈے انٹرنیشنل میچ کھیلا تھا وہ انگلینڈ میں ٹیم کو جوائن کریں گے۔ انہیں صرف پری میچ تیاریوں کے لیے اسکواڈ میں شامل کیا گیا ہے۔

قومی ٹیم کے بولنگ کوچ وقار یونس اور فزیو تھراپسٹ کلف ڈیکن بالترتیب جنوبی افریقہ اور آسٹریلیا سے انگلینڈ میں ٹیم کو جوائن کریں گے جب کہ شعیب ملک کی 24 جولائی کو روانگی متوقع ہے۔

اسپورٹس سائنسز کے ماہرین اور برطانوی حکومت کے قوانین کے مطابق پی سی بی کے ٹیسٹنگ کے عمل کے دوران اسکواڈ میں شامل جن اراکین کے ٹیسٹ مثبت آئے وہ اتوار کو سفر نہیں کرسکیں گے تاہم جونہی ان کے 2 منفی ٹیسٹ آئیں گے انہیں انگلینڈ بھیج دیا جائے گا۔

انگلینڈ روانہ نہ ہونے والے کھلاڑیوں میں محمد حفیظ بھی شامل ہیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے کرائے گئے کرونا ٹیسٹ میں آل راؤنڈر محمد حفیظ کا ٹیسٹ مثبت آیا تھا تاہم جب انہوں نے نجی لیب سے دوبارہ ٹیسٹ کرایا تو اس کی رپورٹ منفی آئی جب کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے مطابق اب تک محمد حفیظ سمیت 10 کرکٹرز کے کرونا ٹیسٹ مثبت آچکے ہیں۔

محمد حفیظ نے اپنا دوسرا ٹیسٹ ایک نجی لیب سے کرایا تھا جس کے منفی آنے کے بعد انہوں نے ایک ٹوئٹ کی اور پیغام دیا کہ ان کا ٹیسٹ منفی آیا ہے۔ ٹوئٹ کے ساتھ ہی ایک نیا تنازع کھڑا ہوگیا تھا۔

محمد حفیظ کے علاوہ چار ریزرو کھلاڑیوں کے کووڈ 19 ٹیسٹ بدھ کو ہوئے تھے۔ ان میں سے عمران بٹ کا ٹیسٹ مثبت جب کہ بلال آصف، محمد نواز اور موسیٰ خان کے ٹیسٹ منفی آئے تھے۔

پی سی بی کے ٹیسٹنگ پروگرام کے پہلے مرحلے میں مثبت آنے والے 10 کھلاڑی اور ایک ٹیم آفیشل کی ری ٹیسٹنگ کے دوران فخر زمان، محمد حسنین، محمد حفیظ، محمد رضوان، شاداب خان اور وہاب ریاض کے ٹیسٹ کے نتائج منفی آئے ہیں۔

اب انہیں ٹیسٹنگ کے تیسرے مرحلے سے گزرنا پڑے گا جو آئندہ ہفتے کسی وقت ہوگا۔ دوسرا ٹیسٹ منفی آنے پر دونوں کھلاڑیوں کی انگلینڈ روانگی کے لیے انتظامات کیے جائیں گے۔

ری ٹیسٹ میں بھی جن کھلاڑیوں کے ٹیسٹ مثبت آئے ہیں ان میں حیدر علی، حارث رؤف، کاشف بھٹی اور عمران خان شامل ہیں۔

پی سی بی میڈیکل پینل کی جانب سے چار کھلاڑیوں اور عملے کے ایک رکن کو فوری طور پر سخت قرنطینہ میں جانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

کرونا وائرس پھیلنے کے بعد انگلینڈ کا دورہ کرنے والی ویسٹ انڈیز پہلی اور پاکستان دوسری ٹیم ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو وسیم خان نے کہا کہ لاجسٹک چیلنجز کے سبب ہمیں غیر معمولی حالات میں مشکلات کا سامنا تھا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG