رسائی کے لنکس

پاکستانی روپے کی قدر میں کمی، ڈالر مہنگا ہو گیا


فائل فوٹو

انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت 110 روپے سے بڑھ کر 115 روپے 50 پیسے تک پہنچ گئی جب کہ اوپن مارکیٹ میں یہ 116 روپے کا ہو گیا اور بعض جگہ یہ 118 روپے تک بھی پہنچ گیا۔

پاکستان میں منگل کو اچانک امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر کم ہونے سے انٹربینک میں ایک ڈالر کی قیمت میں تقریباً پانچ روپے تک اضافہ دیکھا گیا۔

انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت 110 روپے سے بڑھ کر 115 روپے 50 پیسے تک پہنچ گئی جب کہ اوپن مارکیٹ میں یہ 116 روپے کا ہو گیا اور بعض جگہ یہ 118 روپے تک بھی پہنچ گیا۔

مرکزی بینک کے مطابق یہ اضافہ ڈالر کی طلب اور رسد (ڈیمانڈ اور سپلائی) میں فرق کی وجہ سے ہوا۔

ڈالر کی قیمت میں اضافے کے بعد ایسی اطلاعات بھی سامنے آئی ہیں کہ اوپن مارکیٹ میں فاریکس ڈیلرز نے ڈالر کی فروخت روک دی ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ یہ اچانک اضافہ بیرونی ادائیگیوں کی وجہ سے ہوا ہے لیکن اس کا اثر عام صارفین کو مہنگائی کی صورت میں برداشت کرنا پڑ سکتا ہے۔

معاشی ماہرین کے مطابق حکومت کے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں اضافے کی وجہ سے ملکی زرِ مبادلہ کے ذخائر شدید دباؤ کا شکار ہیں اور ایک اندازے کے مطابق حکومت کو ہر ہفتے بیرونی قرضوں اور دیگر ادائیگیوں کی مد میں 20 سے 25 کروڑ ڈالر تک خرچ کرنے پڑ رہے ہیں۔

اس سے قبل بھی متعدد بار ڈالر کی قیمت میں اچانک اضافہ دیکھا جا چکا ہے جس سے مہنگائی کی سطح بھی بڑھ جاتی ہے اور خاص طور پر پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں سمیت درآمدی اشیا کی قیمتوں میں قابلِ ذکر اضافہ ہوجاتا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG