رسائی کے لنکس

شام کا تنازع ختم کرانے کے لیے روس پر مزید دباؤ ڈالا جائے: امریکہ


روس کو سخت ہدف تنقید بناتے ہوئے، اقوام متحدہ میں امریکی سفیر، نِکی ہیلی نے جمعرات کے روز کہا ہے کہ شام میں لڑائی بند کرانے کے لیے روس پر مزید دباؤ ڈالنے کی ضرورت ہے۔

سلامتی کونسل کے 15 ہم منصبوں سے بات کرتے ہوئے، ہیلی نے کہا کہ ’’آپ میں سے بہت سوں نے یہ بات کہی ہے کہ شام کی حکومت پر دباؤ ڈالا جائے؛ اصل میں معاملہ یہ نہیں ہے۔ ہمیں روس پر دباؤ ڈالنے کی ضرورت ہے‘‘۔

کونسل نے شام میں زندگی کی مشکل صورت حال کے بارے میں اپنا ماہوار اجلاس منعقد کیا، جہاں امداد سے متعلق اقوام متحدہ کے ادارے کے سربراہ، اسٹیفن او برائن نے اُنھیں بتایا کہ اس ماہ وہاں کم از کم چھ اسپتالوں اور تین اسکولوں پر بم حملہ کیا گیا؛ محصور مشرقی غوطہ کے شہر کے گرد دائرہ تنگ کیا جا رہا ہے جہاں اکتوبر، 2016ء سے تقریباً 400000 افراد پھنس کر رہ گئے ہیں، جہاں عالمی ادارے کے امدادی قافلوں کی رسائی باقی نہیں رہی۔

ہیلی کے بقول، ’’اب تمام آنکھیں اور تمام دباؤ روس پر لگا ہوا ہے، چونکہ اگر وہ چاہیں تو اِسے بند کرا سکتے ہیں‘‘۔

امریکی سفیر نے کہا کہ بشار الاسد کی حکومت اس لیے میدان میں کھڑی ہوئی ہے، کیونکہ روس نے اُس کا تحفظ جاری رکھا ہوا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG