رسائی کے لنکس

logo-print

چارلی خوش تو جہاں خوش، ٹائیگر ووڈز بیٹے کو تربیت دے رہے ہیں


Masters Golf

ٹائیگر ووڈز پرعزم تھے کہ گرین جیکٹ ٹائٹل کا دفاع کرتے ہوئے آئندہ ہفتےشروع ہونے والا گالف ماسٹرز مقابلہ جیتیں گے۔ وہ ابھی فلوریڈا ہی میں تھے، جہاں سے وہ اگستا نیشنل جانے والے تھے۔ ان پر مقابلے کی دھن سوار تھی۔

پھر ہوا یوں کہ گالف کا ماسٹرز مقابلہ مؤخر ہوا اور وہ گرین جیکٹ مقابلے کو ترک کر کے فلوریڈا ہی میں ٹھہرے، جہاں انھوں نے اپنے 11 برس کے بیٹے کی گالف میں تربیت پر وقت لگانا شروع کیا۔ وہ کہتے ہیں کہ چارلی خوش تو جہان خوش۔

جمعرات کے دن 'گالف ٹی وی چینل' کو دیے گئے ایک انٹرویو میں ووڈز نے بتایا کہ ''میں توانائی محسوس کر رہا تھا، حقیقی طور پر مجھ میں جیت کی تڑپ تھی۔ مجھے معلوم نہیں تھا کہ منتظمین کیا سوچ رہے ہیں''۔

انھوں نے بتایا کہ ماسٹرز مقابلے میں شرکت کے لیے وہ اتوار کی صبح جانے ہی والے تھے کہ انھیں مقابلہ مؤخر ہونے کی اطلاع موصول ہوئی۔

فروری میں ووڈز 'جنیسز انویٹیشنل' گالف مقابلے میں شریک ہوئے تھے۔ لیکن اس کے بعد ہونے والے چار ٹورنامنٹس میں شرکت نہ کر سکے، چونکہ ان کی کمر میں درد تھا۔ اس کے بعد کرونا وائرس کی وبا کے باعث دیگر کھیلوں کے علاوہ گالف کے مقابلے بھی منسوخ کیے گئے۔

دو بچوں اور گرل فرینڈ کے ہمراہ ٹائیگر ووڈز ان دنوں گھر پر ہیں۔

وہ جسمانی مشق کے لیے سائیکل پر گالف کلب جاتے ہیں جہاں وہ میڈلسٹ کلب میں گالف کھیلتے ہیں۔ وہاں وہ چارلی کے ساتھ کھیلتے ہیں، جو گرین جیکٹ جیتنے کی تمنا رکھتے ہیں۔

جب تک ٹائیگر ووڈز اپنی چمپئن شپ برقرار رکھتے ہیں، انہیں اختیار ہے کہ وہ گرین جیکٹ اپنے پاس رکھیں۔ اگر وہ ٹائیٹل کا دفاع کرنے میں ناکام ہوتے ہیں تو جیکٹ کو لاکر میں نہیں رکھ سکتے، جب کہ گالف ماسٹرز میڈل کا دفاع نومبر سے پہلے نہیں ہو سکتا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG