رسائی کے لنکس

logo-print

‘جولیانی ایک دستی بم کی طرح ہیں‘


وائٹ ھاؤس کی سابق اہلکار فایونا ہل شہادت دینے کے بعد واپس جا رہی ہیں

امریکی ایوان نمائندگان کی کمیٹیوں کی طرف سے صدر ٹرمپ کے مواخذے کے حوالے سے تحقیقات جاری ہیں۔ اس سلسلے میں محکمہ خارجہ کے عہدیداروں سمیت متعدد موجودہ اور سابق سرکاری اہلکاروں کو سمن کے ذریعے طلب کر کے شہادتیں لی گئی ہیں۔

اس سلسلے میں آج یورپی اور یوریشیائی امور کیلئے نائب وزیر خارجہ جارج کینٹ نے کیپٹل ہل پہنچ کر انٹیلی جنس، خارجہ اور اور نگرانی کی ھاؤس کمیٹیوں کے رو برو اپنی شہادت ریکارڈ کرائی۔

جارج کینٹ یوکرین سے متعلق ایک کلیدی ماہر سمجھے جاتے ہیں۔ انہوں نے کانگریس کو وہ سرکاری ای میل پیش کیں جن میں انہوں نے یوکرین میں تعینات امریکی سفیر مری یووانووچ کو امریکی انتظامیہ کی طرف سے برطرف کرنے کی کوششوں پر تشویش کا اظہار کیا۔ یووانووچ جمعے کے روز اپنی شہادت ریکارڈ کرا چکی ہیں۔

کل پیر کے روز وائٹ ھاؤس کی یوکرین سے متعلق ایک اور سابق ماہر فایونا ہل نے اپنی دس گھنٹے طویل شہادت ریکارڈ کراتے ہوئے کہا تھا کہ صدر ٹرمپ کے ذاتی وکیل روڈی جولیانی یورپ میں ایک متوازی خارجہ پالیسی چلا رہے تھے، جسے امریکی اہلکاروں اور سفارتکاروں کی جانب سے خفیہ رکھا گیا، تاکہ صدر ٹرمپ کو ذاتی طور پر فائدہ پہنچایا جا سکے۔

انہوں نے کمیٹیوں کے روبرو بیان دیتے ہوئے کہا کہ اس وقت کے قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن یوکرین میں روڈی جولیانی کی خفیہ سرگرمیوں پر اس قدر برہم ہوئے تھے کہ انہوں نے صدر ٹرمپ کے ذاتی وکیل کو ایک ایسا دستی بم قرار دیا جو دھماکے سے سب کو تباہ کر دے گا۔

ان شہادتوں کے ذریعے امریکی ایوان نمائندگان صدر ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی تحقیقات کیلئے ووٹنگ کی غرض سے زیادہ سے زیادہ ارکان کی حمایت حاصل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

اطلاعات کے مطابق، ایوان نمائندگان کی سپیکر نینسی پلوسی منگل کی شام ذاتی طور پر ایوان کے ڈیموکریٹک ارکان سے ملاقات کر رہی ہیں۔

صدر ٹرمپ نے مواخذے کیلئے ان کوششوں کو غیر قانونی قرار دیا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG