رسائی کے لنکس

ایک دور میں لیرک میں 1100 نشستیں ہوا کرتی تھیں اور یہ ملک کا سب سے بڑا سینما تھا۔ ابتدائی دور میں یہاں ٹکٹ 6 آنے‘ 12 آنے‘ ایک روپیہ‘ ایک روپیہ آٹھ آنے‘ دو روپے اور دو روپے آٹھ آنے میں ملاکرتا تھا۔

کراچی کا ایک اور سنیما شہر کے دیرینہ رہائشیوں کی یادوں سے نکل کر ہمیشہ کے لئے ان سے دور ہوگیا۔ صدر میں واقع تاریخی ’’لیرک سنیما ‘‘ مسمار ہو گیا ہے۔

اگر چہ سنیما پچھلے کئی سال سے بند تھا لیکن چونکہ اسی کے برابر میں واقع ایک اور قدیم سنیما ’بمبیو ‘تاحال لوگوں کو انٹرٹین کر رہا ہے اس لئے شہریوں اور کم ازکم وہاں سے روزانہ گزرنے والے افراد کو یہ امید تھی کہ سنیما جلد کھل جائے گا اور نئی آب و تاب کے ساتھ کھلے گا کیوں کہ اب ملک میں سنیما انڈسٹری پہلے کے مقابلے میں پھل پھو ل رہی ہے اور بہت سے سنیما انتہائی جدید انداز کے ہوگئے ہیں لیکن عیدالاضحی کی چھٹیاں ختم ہوتے ہی اسے بھی زمین بوس کردیا گیا۔

تاریخی حوالے بتاتے ہیں کہ لیرک شہر کے تاریخی سنیماہالز میں سے ایک تھا اور ساٹھ کے عشرے میں اس کا افتتاح ہوا تھا۔

ایک دور میں اس سے بہت ہی قریب ’ناز‘ سنیما ہوا کرتا تھا جس کا افتتاح 1948میں قائد اعظم کی بہن محترمہ فاطمہ جناح نے کیا تھا جبکہ لیرک سنیما پر سابق فوجی صدر ایوب خان جیسی اہم شخصیت نے یہاں خود بھی فلم دیکھی تھی۔

لیرک سنیما کو منہدم کئے جانے سے متعلق تفصیل میں اس کے ایک عہدیدار ہارون رشید کا کہنا ہے ’فلم اور سنیما دونوں انڈسٹریز کی حالت بہتر نہیں۔ سنیما پرانی طرز کا تھا جبکہ اب جو فلم دیکھنے والی نئی جنریشن ہے وہ جدید سنیماہالز کا رخ کرتی ہے۔ ایسے میں سنیما کی منٹی نینس اور اسے چلانے کے لئے معاشی مسائل کا سامنا تھا یہاں تک کہ اخراجات پورے کرنا بھی مشکل ہو گئے تھے۔ اس لئے سنیما بند کرنا پڑا۔

کراچی کا بمبینو سنیما جس کے برابر میں لیرک واقع تھا
کراچی کا بمبینو سنیما جس کے برابر میں لیرک واقع تھا

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا ’ناز ‘ کی طرح اب اس کی جگہ بھی ملٹی اسٹوری پلازہ بنایا جائے گا۔

بقول ہارون ’ ایک دور میں اس میں 1100 نشستیں ہوا کرتی تھیں اور یہ ملک کا سب سے بڑا سینما تھا۔ ابتدائی دور میں یہاں ٹکٹ 6 آنے‘ 12 آنے‘ ایک روپیہ‘ ایک روپیہ آٹھ آنے‘ دو روپے اور دو روپے آٹھ آنے میں ملا کرتا تھا۔

کراچی کے ایک سینئر صحافی ایس ایم صوفی کے مطابق ’اس دور میں بھی بھارتی فلمیں سنیما ہالز پر دکھائی جاتی تھیں۔ بھارتی فلم ’نور جہاں ‘ نے یہاں سب سے زیادہ بزنس کیا جبکہ انگریزی فلموں میں ’گنز آف نیووران ‘ نے سب سے زیادہ پیسہ کمایا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG