رسائی کے لنکس

logo-print

شمالی کوریا کا ایک اور مشتبہ بیلسٹک میزائل کا تجربہ


فائل فوٹو

جنوبی کوریا کی وزارت دفاع نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی سے اس خبر کی تصدیق کی ہے لیکن اس کا کہنا تھا کہ میزائل کی صلاحیت اور یہ کتنے فاصلے تک مار کر سکتا ہے اس کی تصدیق نہیں کی جا سکی۔

جنوبی کوریا کے ذرائع ابلاغ نے کہا ہے کہ شمالی کوریا نے اپنے مشرقی ساحل سے ایک مشتبہ بیلسٹک میزائل داغا ہے جو کہ رواں برس کی اس طرف سے کیے گئے متعدد تجربات میں سے تازہ ترین ہے۔

یہ اقدام پیانگ یانگ اور سیول کے مابین بڑھتی ہوئی کشیدگی کو مزید اجاگر کرتا ہے۔

جنوبی کوریا کی خبر رساں ایجنسی یونہاپ کے مطابق زمین سے فضا تک مار کرنے والا یہ میزائل جمعہ کی دوپہر جاپان کے سمندر میں گرا۔

وزارت دفاع نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی سے اس خبر کی تصدیق کی ہے لیکن اس کا کہنا تھا کہ میزائل کی صلاحیت اور یہ کتنے فاصلے تک مار کر سکتا ہے اس کی تصدیق نہیں کی جا سکی۔

شمالی کوریا نے جنوری سے بظاہر ہتھیاروں کے متعدد تجربے کیے ہیں جس پر اسے امریکہ اور اقوام متحدہ سمیت بیرونی دنیا کی طرف سے مزید سخت پابندیوں کو سامنا کرنا پڑا ہے۔

پابندیوں کے باوجود شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اُن ایسے تجربات جاری رکھنے کے علاوہ اپنی فوج کو جوہری جنگ کے لیے تیار رہنے کا اعلان بھی کر چکے ہیں۔

پیانگ یانگ کے اس 'اشتعال انگیزی' پر واشنگٹن میں امریکہ، جنوبی کوریا، چین اور جاپان کے رہنماؤں نے تبادلہ خیال کیا ہے۔

XS
SM
MD
LG