رسائی کے لنکس

پاکستان کی طرف سے افغان فوجی تربیت گاہ کے قریب حملے کی مذمت


ترجمان دفتر خارجہ نفیس ذکریا (فائل فوٹو)

پاکستان نے افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک فوجی تربیت گاہ کے قریب ہونے والے مہلک دہشت گرد حملے کی شدید مذمت کی ہے۔

دفتر خارجہ سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ پاکستان کو اس ہولناک دہشت گری کے واقعے میں قیمتی جانوں کے نقصان پر انتہائی افسوس ہے اور وہ غمزدہ خاندانوں سے ہمدری اور تعزیت کا اظہار کرتا ہے۔

ہفتہ کو مارشل فہیم ملٹری اکیڈمی کے باہر کھڑی ایک بس کے نزدیک ہونے والے خودکش بم دھماکے میں 15 زیر تربیت اہلکار ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے تھے۔

اس بس پر زیرتربیت اہلکار سوار تھے اور طالبان نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

پاکستانی دفتر خارجہ کے بیان میں کہا گیا کہ پاکستان ہر طرح کی دہشت گردی کی شدید مذمت کرتا ہے اور انسداد دہشت گردی کی جنگ میں افغان حکومت اور عوام کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتا ہے۔

مزید برآں بیان میں دہشت گردی کے خاتمے کے لیے تمام ممالک کے درمیان قریبی تعاون اور مربوط کوششوں کی ضرورت پر بھی زور دیا گیا۔

فوجی تربیت گاہ کے قریب ہونے والے دھماکا افغانستان میں 24 گھنٹوں کے دوران ہونے والا تیسرا خودکش حملہ تھا۔

جمعہ کو کابل اور وسطی صوبہ غور میں دو مختلف مساجد پر ہونے والے خودکش بم حملوں میں 72 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے تھے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG