رسائی کے لنکس

ٹرمپ ٹلرسن کی جگہ پومپیو کو وزیر خارجہ نامزد کر سکتے ہیں: رپورٹس


فائل

وائٹ ہاؤس ترجمان نے کہا ہےکہ ’’فی الوقت کسی ردوبدل کا کوئی اعلان زیر غور نہیں ہے۔ وزیر خارجہ ٹلرسن محکمہٴ خارجہ کی قیادت کر رہے ہیں، جب کہ صدر ٹرمپ کی انتظامیہ اپنا پہلا انتہائی کامیاب سال مکمل کرنے والی ہے، اور ساری کابینہ کا دھیان اُسی پر مرکوز ہے‘‘

اِس بات کا امکان ہے کہ آئندہ چند ہفتوں کے دوران، امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ ریکس ٹلرسن کی جگہ سینٹرل انٹیلی جنس ایجنسی کے سربراہ، مائیک پومپیو کو وزیر خارجہ کا قلمدان حوالے کریں۔ ذرائع ابلاغ نے یہ بات جمعرات کو انتظامیہ کے اعلیٰ حکام کے حوالے سے بتائی ہے۔

متعدد امریکی خبر رساں اداروں نے یہ رپورٹ دی ہے کہ ٹرمپ کافی عرصے سے قومی سکیورٹی کے چوٹی اہل کاروں کے فرائضِ منصبی میں تبدیلی کے بارے میں غور کر رہے تھے، حالانکہ یہ بات واضح نہیں آیا ٹرمپ نے اس متعلق کوئی فیصلہ کیا ہے۔

وائٹ ہاؤس میں اخباری نمائندوں کے ساتھ ایک مختصر بات چیت کے دوران، جب ٹرمپ سے ٹلرسن کے بارے میں پوچھا گیا، تو اُن کا کہنا تھا کہ ’’وہ یہیں ہیں۔ ریکس یہیں ہیں‘‘۔ صدر نے کوئی مزید بات نہیں کی۔

وائٹ ہاؤس نے ٹلرسن کے رخصت ہونے سے متعلق رپورٹوں کو کوئی خاصہ اہمیت نہیں دی۔

وائٹ ہاؤس ترجمان، سارا ہکابی سینڈرز نے کہا ہے کہ ’’جیسا کہ ابھی صدر نے کہا، ریکس یہیں ہیں‘‘۔

ترجمان نے کہا کہ ’’فی الوقت کسی ردوبدل کا کوئی اعلان زیر غور نہیں ہے۔ وزیر خارجہ ٹلرسن محکمہٴ خارجہ کی قیادت کر رہے ہیں، جب کہ صدر ٹرمپ کی انتظامیہ اپنا پہلا انتہائی کامیاب سال مکمل کرنے والی ہے، اور ساری کابینہ کا دھیان اُسی پر مرکوز ہے‘‘۔

رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ سوچ یہ ہے کہ ارکنسا کے ری پبلیکن پارٹی کے سینیٹر، ٹوم کاٹن، جو قومی سلامتی کے امور میں ٹرمپ کے قریبی ساتھی ہیں، سی آئی اے سربراہ کے طور پر پومپیو کی جگہ لیں گے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG