رسائی کے لنکس

جینا ہیسپل کی بطور ڈائریکٹر سی آئی اے تقرر کی منظوری


جینا ہیسپل امریکی سینیٹ کی انٹیلی جنس کمیٹی کے ارکان کے سوالوں کے جواب دے رہی ہیں (فائل فوٹو)

سینیٹ کے اجلاس سے قبل بدھ کو سینیٹ کی انٹیلی جنس کمیٹی نے 5 کے مقابلے میں 10 ووٹوں سے جینا ہیسپل کی نامزدگی کی توثیق کردی تھی۔

امریکی سینیٹ نے خفیہ ادارے 'سینٹرل انٹیلی جنس ایجنسی' (سی آئی اے) کے سربراہ کی حیثیت سے جینا ہیسپل کی تقرری کی منظوری دے دی ہے۔

جمعرات کی شب 100 رکنی سینیٹ میں ہونے والی ووٹنگ میں جینا ہیسپل کے حق میں 54 جب کہ ان کے خلاف 45 ووٹ پڑے۔

چھ ڈیموکریٹ سینیٹرز نے جینا ہیسپل کے حق میں جب کہ دو ری پبلکن ارکان نے ان کے خلاف ووٹ دیا۔

سینیٹ سے منظوری کے بعد سی آئی اے کی نئی ڈائریکٹر کی تقرری کا طویل اور تنازعات سے بھرپور عمل مکمل ہوگیا ہے ۔

جینا ہیسپل کو صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سی آئی اے کے سابق سربراہ مائیک پومپیو کی جگہ خفیہ ادارے کا سربراہ نامزد کیا تھا جنہوں نے گزشتہ ماہ سینیٹ سے منظوری کے بعد امریکہ کے نئے وزیرِ خارجہ کی ذمہ داریاں سنبھال لی تھیں۔

تاہم نامزدگی کے فوراً بعد ہی جینا ہیسپل سے متعلق یہ انکشافات سامنے آئے تھے کہ وہ گیارہ ستمبر 2001ء کے حملوں کے بعد سی آئی اے کی جانب سے روا رکھے جانے والے متنازع تفتیشی طریقوں اور دورانِ تفیش ملزمان پر تشدد کے استعمال کی نگران رہی ہیں جس پر کئی حلقوں نے ان کی نامزدگی کی مخالفت کی تھی۔

بعض ڈیموکریٹ سینیٹرز نے بھی امریکی صدر سے جینا ہیسپل کی نامزدگی واپس لینے کا مطالبہ کیا تھا لیکن صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ انہیں ہیسپل پر مکمل اعتماد ہے اور وہ سی آئی اے کی سربراہی کے لیے سب سے موزوں امیدوار ہیں۔

سینیٹ کے اجلاس سے قبل بدھ کو سینیٹ کی انٹیلی جنس کمیٹی نے 5 کے مقابلے میں 10 ووٹوں سے جینا ہیسپل کی نامزدگی کی توثیق کردی تھی۔

اپنی تقرری سے متعلق کمیٹی میں سماعت کے دوران جینا ہیسپل نے قانون سازوں کو بتایا تھا کہ نائن الیون کے سانحے کے بعد کیے جانے والے ان کے اقدامات کو محکمۂ انصاف کی حمایت اور توثیق حاصل تھی اور وہ اقدامات ایسے مخصوص حالات میں کیے گئے تھے جب امریکہ کو اپنی سلامتی سے متعلق شدید خطرات لاحق تھے۔

اپنی تقرری سے قبل جینا ہیسپل سی آئی اے کی نائب سربراہ کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہی تھیں۔ وہ ایجنسی کی سربراہ بننے والی پہلی خاتون ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG