رسائی کے لنکس

logo-print

’یہ کہنا درست نہیں کہ نیٹو ممالک اپنے دفاع کے لیے درکار رقوم خرچ نہیں کرتے‘


یورپی کونسل کے صدر ڈونالڈ ٹسک نے اپنے بیان میں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے اس دعوے کو غیر درست قرار دیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ نیٹو ممالک اپنے دفاع کے لیے درکار رقوم خرچ نہیں کرتے۔

ایک ٹوئٹر پوسٹ میں ٹسک نے تحریر کیا ہے کہ ’’یورپی یونین سے بڑھ کر امریکہ کو کوئی اتحادی نہیں ہو سکتا‘‘۔

ٹسک نے کہا کہ ’’اپنے دفاع پر ہم روس کے مقابلے میں زیادہ خرچ کرتے ہیں، اتنا ہی جتنا کہ چین کرتا ہے۔ مجھے اس بات میں کوئی شک نہیں اور توقع ہے کہ یہ اپنے ہی ملک کی سلامتی کے لیے سرمایہ کاری ہے، جب کہ روس اور چین کے اخراجات کے بارے میں اعتماد کے ساتھ یہ بات نہیں کہی جاسکتی‘‘۔

ٹسک نے ٹرمپ سے کہا کہ وہ امریکہ اور نیٹو کے طویل مدتی تعلقات کو ذہن میں رکھیں؛ اور امریکی صدر پر زور دیا کہ وہ ’’اپنے اتحادیوں کو سراہیں، چونکہ بہرحال آپ کے پاس اِن کی زیادہ تعداد نہیں ہے‘‘۔

نیٹو سربراہان سے ملاقات کے لیے برسلز کے لیے روانہ ہونے سے قبل، ’ایئر فورس ون‘ میں سوار ہوتے ہوئے، ٹرمپ نے ٹسک کے بیان کو مسترد کیا کہ امریکی کے پاس اتحادیوں کا فقدان ہے۔

ٹرمپ نے اخبار ی نمائندوں کو بتایا کہ ’’ہمیں بہت سارے اتحادیوں کا ساتھ حاصل ہے‘‘۔

بقول اُن کے، ’’لیکن، ہمیں غلط نہ سمجھا جائے۔ یورپی یونین ہم سے فوائد حاصل کر رہا ہے‘‘۔

اس سے قبل منگل کو ٹرمپ نے نیٹو رکن ملکوں پر نکتہ چینی کی۔

اپنے ٹوئٹر پیغام میں، صدر ٹرمپ نے کہا کہ ’’دوسروں کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے امریکہ دوسرے ملکوں کے مقابلے میں زیادہ رقوم مختص کر رہا ہے۔ یہ بات امریکی ٹیکس دہندگان کے لیے مناسب نہیں۔ اس سے بڑھ کر، یورپی یونین کے ساتھ تجارت میں ہمیں 151 ارب ڈالر کا نقصان ہوتا ہے؛ جب کہ وہ (یورپ) ہم پر زیادہ محصول اور رکاوٹیں ڈالتا ہے‘‘۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG