رسائی کے لنکس

logo-print

الیکشن کے انتظامات پر نگران وزیر اعظم اور آرمی چیف کی ملاقات


نگران وزیر اعظم ناصر الملک اور جنرل قمر جاوید باجوہ کے درمیان وزیر اعظم آفس میں ملاقات۔ 25 جون 2018

ترجمان وزیراعظم ہاؤس کے مطابق نگران وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک اور اور پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی ملاقات وزیراعظم آفس اسلام آباد میں ہوئی۔ نگران وزیراعظم اور آرمی چیف کے درمیان ملاقات میں ملک میں ہونے والے عام انتخابات سے متعلق بات چیت اور تیاریوں پر گفتگو کی گئی جب کہ پاک فوج کے پیشہ وارانہ أمور اور صلاحیتوں پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

اس سے قبل نگران وزیراعظم ناصرالملک کی زیر صدارت عام انتخابات سے متعلق اجلاس ہوا جس میں چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ، چیف سیکرٹریز، آئی جیز اور الیکشن کمشن حکام بھی شریک تھے،

اجلاس میں سیکرٹری الیکشن کمشن بابر فتح یعقوب نے انتخابات کے حوالے سے بریفنگ دی، اس موقع پر انہوں نے امیدواروں، پریزائیڈنگ افسران، میڈیا، پولنگ عملہ اور ملکی و غیر ملکی مبصرین کے لیے بنائے گئے ضابطہ اخلاق کے حوالے سے بھی آگاہ کیا۔

اجلاس کے دوران چاروں صوبوں کے چیف سیکرٹریز نے انتظامی معاملات پر شرکا کو آگاہ کیا۔

نگراں وزیراعظم کی آرمی چیف سے ملاقات
please wait

No media source currently available

0:00 0:00:41 0:00

چاروں صوبائی آئی جیز نے سیکیورٹی انتظامات سے متعلق رپورٹ پیش کی۔ الیکشن کمیشن نے پولنگ اسٹیشنز اور بیلٹ پیپرز کی چھپائی پر بھی بریفنگ دی۔ الیکشن کمیشن حکام نے بتایا کہ بیلٹ پیپرز کی چھپائی کے دوران سیکورٹی کے انتہائی سخت اقدامات کئے جارہے ہیں۔

نگران وزیر اعظم نے انتخابات کے حوالے سے کی جانے والی تیاریوں پر اظہار اطمینان کیا۔ انہوں نے کہا کہ صاف، شفاف اور غیر جانبدارانہ انتخابات کا بروقت انعقاد نگران حکومت کی ذمہ داری ہے اور انتخابات 25 جولائی کو ہی ہوں گے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ آزادانہ، منصفانہ اور پرامن انتخابات کے انعقاد کو یقینی بنانا الیکشن کمشن آف پاکستان کی اولین ذمہ داری ہے۔ وفاقی اور صوبائی حکومتیں الیکشن کمشن کو اس کی آئینی ذمہ داریوں کی ادائیگی میں ہر ممکنہ تعاون فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔

دوسری جانب الیکشن کمشن آف پاکستان ذرائع کے مطابق کمشن نےانتخابات کے دوران پاک فوج کی تعیناتی کے لیے پاک فوج کو خط لکھ دیا ہے جس میں انتخابات کے ساتھ ساتھ بیلٹ پیپر کی چھپائی کے دوران پاک فوج کی سیکیورٹی فراہم کرنے کی بھی درخواست کی ہے۔

پاک فوج بیلٹ پیپر کی چھپائی کے دوران 30 پرنٹنگ پریس پر سیکیورٹی کے فرائض سرا نجام دے گی اور بعد ازاں انتخابی سامان کو پولنگ اسٹیشنوں تک پہنچانے میں بھی معاونت فراہم کرے گی۔ اس عمل میں کتنے فوجی اہل کار شریک ہوں گے اس کا حتمی اعلان اب تک نہیں کیا جا سکا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG